گورنر سندھ نے پاک پلاس 2020 کا افتتاح کیا

تین روزہ نمائش میں 50 سے زائد کمپنیاں شریک ہیں، پلاسٹک مصنوعات کی ویلیو ایڈیشن ضروری ہے،گورنر سندھ
کراچی:گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ پاکستان میں کئی پلاسٹک مصنوعات عوام کی زندگی کا حصہ ہیں ، ضرورت اس امر کی ہے کہ ان کے معیار میں اضافہ کرنے کے ساتھ ساتھ ویلیو ایڈیشن پر بھرپور توجہ دی جائے تاکہ ان کی مارکیٹ ویلیو بڑھ سکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایکسپو سینٹر میں پاکستان پلاسٹک مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کی تین روزہ نمائش کا افتتاح کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وفاق ایوانہائے صنعت و تجارت کے صدر انجم نثار ، پی پی ایم اے کے سرپرست اعلیٰ ذکریا عثمان، ایسوسی ایشن کے صدر نبیل ہاشمی اور دیگر بھی موجود تھے۔ اس نمائش میں 50سے زائد کمپنیاں گھریلو، کمرشل اور انڈسٹریل پلاسٹک مصنوعات کے ساتھ حصہ لے رہی ہیں۔ گورنر سندھ نے کہا کہ پلاسٹک کی کمرشل اور صنعتی طلب میں بھی اضافہ ہورہا ہے جس سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ پاکستان میں پلاسٹک انڈسٹری میں توسیع اور ترقی کے وسیع مواقع موجود ہیں جن سے استفادہ کرنے کی ضرورت ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ موجودہ حکومت پیداواری شعبہ کے فروغ کے لئے اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پلاسٹک انڈسٹری کو درپیش مسائل کے حل کے لئے وہ وزیراعظم پاکستان سے گذارش کریں گے۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلیٰ ذکریا عثمان نے گورنر سندھ سے درخواست کی کہ پلاسٹک سٹی کے قیام کے لئے اقدامات کئے جائیں تاکہ پلاسٹک کی تمام صنعتوں کو وہاں منتقل کیا جاسکے۔ صدر وفاق ایوانہائے صنعت و تجارت انجم نثار نے خطاب میں کہا کہ صنعتوں کو یوٹیلٹیز کی فراہمی میں حائل رکاوٹیں دور کی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ مہنگی بجلی کے باعث صنعتوں کو دشواری کا سامنا ہے۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں