وزیرِ اعظم کا ریلوے کے حوالے سے جانی نقصانات پر اظہارتشویش

وزیرِ اعظم کا ریلوے کے حوالے سے جانی نقصانات پر اظہارتشویش ،ادارے کی تنظیم نو کیلئے جامع پلان تشکیل دینے کی ہدایت
موجودہ حکومت کو اس امر کا بخوبی ادراک ہے کہ ملک کی ترقی کے لئے ریلوے کی ترقی نہایت ضروری ہے، موجودہ حکومت کی یہ کوشش ہے کہ ریلوے کو جدید خطوط پر استوار کرتے ہوئے اسے منافع بخش اور فعال ادارہ بنایا جائے، عمران خان کا پاکستان ریلوے سے متعلق جائزہ اجلا س سے خطاب
اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خا ن نے ریلوے کے حوالے سے جانی نقصانات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس سلسلے میں فوری اقدامات کی ضرورت پر زور دیا اورکہاکہ پاکستان ریلویز کو فعال اور منافع بخش ادارہ بنانے کے لئے ادارے کی تنظیم نو کی ضرورت ہے اس حوالے سے مشیر اصلاحات کی مشاورت سے ایک جامع پلان تشکیل دیا جائے، موجودہ حکومت کو اس امر کا بخوبی ادراک ہے کہ ملک کی ترقی کے لئے ریلوے کی ترقی نہایت ضروری ہے، موجودہ حکومت کی یہ کوشش ہے کہ ریلوے کو جدید خطوط پر استوار کرتے ہوئے اسے منافع بخش اور فعال ادارہ بنایا جائے۔ پیر کو وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت پاکستان ریلوے کی تنظیم نو اور ریلوے سے متعلقہ معاملات کے حوالے سے جائزہ اجلاس ہوا جس میں وزیرِ ریلوے شیخ رشید احمد، معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان اور ریلوے کے سینئر افسران نے شرکت کی ۔اجلاس میں ریلوے سے متعلقہ معاملات کا جائزہ لیا گیا۔ وزیرِ ریلوے شیخ رشید احمد نے موجودہ دور میں ریلوے کے مختلف شعبوں مثلا ریلوے کے خسارہ میں کمی لانے، مسافر کوچز کی تعداد میں اضافے، ریلوے ٹریک کی بہتری، مال بردار گاڑیوں کی تعداد میں اضافہ کرنے، ریلوے کے شعبہ میں پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے فروغ اور مسافروں کو سہولیات فراہم کرنے کے حوالے سے اب تک کی جانے والی اصلاحات پر تفصیلی بریف کیا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ موجودہ حکومت کو اس امر کا بخوبی ادراک ہے کہ ملک کی ترقی کے لئے ریلوے کی ترقی نہایت ضروری ہے اسی لیے موجودہ حکومت کی یہ کوشش ہے کہ ریلوے کو جدید خطوط پر استوار کرتے ہوئے اسے منافع بخش اور فعال ادارہ بنایا جائے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ ریلوے کے حوالے سے جانی نقصانات قابل تشویش ہیں اور اس ضمن میں فوری اقدامات کی ضرورت ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ پاکستان ریلویز کو فعال اور منافع بخش ادارہ بنانے کے لئے ادارے کی تنظیم نو کی ضرورت ہے اس حوالے سے مشیر اصلاحات کی مشاورت سے ایک جامع پلان تشکیل دیا جائے۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں