وزیر اعظم کا آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے اجلاس سے خطاب

بھارت تباہی کی جانب گامزن مودی کے اقدامات نے کشمیریوں کی منزل کو قریب کر دیا، عمران خان
مودی 5 اگست کو بہت بڑی غلطی کر بیٹھا ہے، کشمیر کے ایشو کو اگلے لیول پر لے جانے کے لیے منصوبہ بندی کررہے ہیں، دنیا کشمیر پر ہمارے نکتہ نظر کو اہمیت دے رہی ہے،بھارت نے شہریت قانون سے اقلیتوں کو دیوار سے لگا دیا ہے وہاں مسلمانوں کو نہیں مسیحی اور ہندوں کو بھی خطرات لاحق ہیں،بھارت کشمیر سے عالمی توجہ ہٹانے کے لیے فوجی آپریشن کرسکتا ہے، جمہوریت بہترین نظام، ملک لوٹنے والوں سے دوستی نہیں کروں گا
یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر وزیر اعظم کا آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے اجلاس سے خطاب
مظفر آباد:وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہبھارت اپنے اقدامات کی وجہ سے تباہی کی جانب بڑھ رہا ہے مودی نارمل انسان نہیں، مودی کے اقدامات نے کشمیریوں کی منزل کو قریب کر دیامودی بھارت کو جہاں لے گیا اب پیچھے نہیں ہٹ سکتا، مودی 5 اگست کو بہت بڑی غلطی کر بیٹھا ہے، میرا ایمان ہے کہ کشمیر آزاد ہوگا، کشمیر کے ایشو کو اگلے لیول پر لے جانے کے لیے منصوبہ بندی کررہے ہیں، دنیا کشمیر پر ہمارے نکتہ نظر کو اہمیت دے رہی ہے،بھارت کشمیر سے عالمی توجہ ہٹانے کے لیے فوجی آپریشن کرسکتا ہے، 5 اگست کے بعد ہمیں کشمیر کے معاملے پر آر ایس ایس کا فلسفہ بے نقاب کرنے کا موقع ملا ہے جس کے لیے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے علاوہ دیگر ممالک کے سربراہوں سے بات کی ہے۔ مودی نے ساری انتخابی مہم پاکستان کیخلاف کییوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر وزیر اعظم عمران خان نے آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی نے ہندوتوا فلاسفی کو پروان چڑھایا، مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے کیلئے ہر فورم کا استعمال کیا، مودی آر ایس ایس کے نظریے کو اوپر لایا، آر ایس ایس ہٹلر سے متاثر تھی، آر ایس ایس نے یہودیوں کے قتل عام کو سراہا، ہم نے لوگوں کو بتایا کہ آر ایس ایس کا فلسفہ کیا ہے، آر ایس ایس مقبوضہ کشمیر کو اکثریت سے اقلیت میں بدلنا چاہتا ہے، دنیا کشمیر کو دیکھ رہی ہے اس لیے بھارت پھنس چکا ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا دہشتگردی کو اسلام سے جوڑ دیا جاتا ہے، ہندو، یہودی دہشتگردی کا کبھی کسی نے کہا ؟ بھارت عالمی برادری کی توجہ ہٹانے کیلئے فالس فلیگ آپریشن کرسکتا ہے، دین اور دہشتگردی کا کوئی تعلق نہیں، وزیر اعظم نے کہا کہ بھارت نے شہریت قانون سے اقلیتوں کو دیوار سے لگا دیا ہے وہاں مسلمانوں کو نہیں مسیحی اور ہندوں کو بھی خطرات لاحق ہیں دنیا کی تاریخ نے ثابت کیا ہے کہ جمہوریت سب سے بہتر نظام ہے، ملک لوٹنے والوں سے دوستی نہیں کروں گا جمہوریت سے ملک میں خوشحالی آتی ہے، دنیا کی تاریخ نے ثابت کیا ہے کہ جمہوریت سب سے بہتر نظام ہے اس لیے جتنی بہتر جمہوریت ہوگی اتنی خوشحالی ہوگی۔ اونچ نیچ اللہ کی طرف سے آتی ہے، قوموں پر مشکل وقت آتے ہیں، مشکل وقت میں قومیں صبر کرتی ہیں، مشکل وقت سے نکل کر ہم عظیم قوم بنیں گے۔انہوں نے کہا کہ میری کسی سے ذاتی لڑائی نہیں ہے، مگر گھر میں چوری کرنے والوں سے دوستی کیسے کروں۔ ملک کو لوٹنے والے، پیسہ باہر لے جانے والوں سے مفاہمت نہیں ہو سکتی۔چین نے 450 وزرا کو جیلوں میں ڈالا، جس ادارے کی طرف دیکھوں خسارے میں ہے، اپنے اندر کبھی مایوسی نہ لائیں، یہ گناہ ہیعمران خان نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے جو قدم اٹھایا اس کے بعد مجھے یقین ہے کشمیر آزاد ہوگا کیونکہ 5اگست کو مودی نے کشمیر کی حیثیت ختم کرکے بہت بڑی غلطی کی ہے۔ بھارت نے 80 لاکھ کشمیریوں کو نظربند کیا ہوا ہے، بھارت 80 لاکھ کشمیریوں کو زیادہ دیر تک محاصرے میں نہیں رکھ سکتا اور نریندرمودی کے بیانات سے معلوم ہوتا ہے کہ وہ نا اھل انسان ہیں جبکہ پاکستان سے متعلق بھارتی قیادت کی بوکھلاہٹ کے عکاس ہیں وزیر اعظم نے کہا کہ میں نے ہر فورم پرکشمیروں کا مقدمہ لڑا اور انٹرنیشنل میڈیا کو انٹرویوز بھی دیے تاکہ بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب ہو۔ اقوام متحدہ، جنرل اسمبلی اور واشنگٹن میں امریکی صدر کے سامنے بھی مسئلہ کشمیر اٹھایا۔ یورپین پارلیمنٹ میں 600 ممبران نے کشمیر پر قرارداد پاس کی جب کہ بین الاقوامی میڈیا بھی اب کشمیر کو اہمیت دے رہا ہے۔ پہلی بار میڈیا بھارت کے مقابلے میں پاکستانی موقف کو اجاگر کر رہا ہے ۔عمران خان نے کہا کہ کشمیر کے ایشوز کو اگلے لیول پر لے جانے کے لیے منصوبہ بندی کررہے ہیں، دنیا کشمیر پر ہمارے نکتہ نظر کو اہمیت دے رہی ہے۔خطاب کے دوران عمران خان نے کہا کہ بھارت کشمیر سے عالمی توجہ ہٹانے کے لیے فوجی آپریشن کرسکتا ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 5اگست کے بعد ہمیں کشمیر کے معاملے پر آر ایس ایس کا فلسلفہ بے نقاب کرنے کا موقع ملا ہے جس کے لیے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے علاوہ دیگر ممالک کے سربراہوں سے بات کی ہے۔ بھارت نے شہریت قانون سے اقلیتوں کو دیوار سے لگا دیا ہے وہاں مسلمانوں کو نہیں مسیحی اور ہندوں کو بھی خطرات لاحق ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارت میں علیحدگی پسند تحریکیں شروع ہوچکی ہیں، بھارت تباہی کی جانب بڑھ رہا ہے، مودی بھارت کو جہاں لے گیا اب پیچھے نہیں ہٹ سکتا عمران خان نے کہا کہ بھارت گھبراہٹ کا شکار ہے پاکستان سے متعلق بیانات بھارتی قیادت کے بوکھلاہٹ کا عکاس ہیں ان کا کہنا تھا کہ مودی نارمل انسان نہیں،پاکستان کو گیارہ دن میں فتح کرنے کا بیان نارمل انسان نہیں دیتا۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں