ضلعی انتظامیہ اور لیڈی ہیلتھ ورکرز کے مابین مذاکرات کامیاب

صوابی: ضلعی انتظامیہ اور لیڈی ہیلتھ ورکرز کے مابین مذاکرات کامیاب ہو گئے جس پر لیڈی ہیلتھ ورکرز نے پولیو مہم سے اپنا بائیکاٹ ختم کرنے کا اعلان کیا ۔گذشتہ روز کالو خان ہسپتال میں ایک منعقدہ اجلاس میں 22لیڈی ہیلتھ ورکرز اور ایک لیڈی سپر وائزر نے پیر سے شروع ہونے والی پولیو مہم سے بائیکاٹ کا اعلان کیا تھا ان کا موقف تھا کہ جب تک پانچ یوم قبل یو سی پر مولی میں پولیو مہم کے دوران قتل کی جانے والی دو لیڈی ہیلتھ ورکرز کے قاتلوں کو گرفتار نہیں کیا جاتا او ر ان کو سزا دی نہیں جا تی تب تک پولیو مہم میں حصہ نہیں لینگے ہمیں انصاف چاہئے اور ہم سے وہ کام نہ لیا جائے جو ہماری ڈیوٹی میں شامل نہیں جب تک ظالم کو اس کی ظلم کی سزا نہیں ملتی تب تک ہم پولیو سمیت کوئی کام نہیں کرینگے۔ تین یوم سوگ کی وجہ سے پر مولی کے علاقے میں پولیو مہم کو موخر کر دیا تھا جس پر پیر کے روز دوبارہ اس علاقے میں مہم شروع کر دی گئی ۔ ڈی ایچ او ڈاکٹر طارق نے بتایا کہ پولیو مہم کے لئے محکمہ صحت کی 328ٹیمیں بنائی گئی ہے جب کہ 1لاکھ 11ہزار 201بچوں کو پولیو سے بچائو کے قطرے پلوائے جائیں گے اسی طرح پولیو ٹیموں کی سیکیورٹی کے لئے 1400پولیس اہلکار تعینات ہے ۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں