کورونا وائرس: ہلاکتوں میں اضافہ

مزید 254 ہلاک،15ہزار152نئے کیسز کی تصدیق ،مجموعی ہلاکتیں 1171، متاثرہ مریضوں کی تعداد 52ہزار526ہوگئی ، 8030افراد کی حالت تشویشناک ،مزید 2600 فوجی طبی عملہ ووہان روانہ
پی ایل اے فضائیہ کے 11 ٹرانسپورٹ طیاروں کے ذریعے طبی عملہ اور اشیاء ووہان پہنچا دی گئیں
چین نے کرونا وائرس سے متعلقہ کاروباری اداروں کیلئے مضبوط مالی اعانت متعارف کرادی،وائرس کیخلاف جنگ میں غیرملکی کمپنیاں بھی چین کی مدد کیلئے سامنے آگئیں
بیجنگ/ ووہان:چین میں کورونا وائرس کی تشخیص کے معیار پر نظر ثانی کے بعدہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہوگیا،وائرس کے باعث مزید 254افراد ہلاک ہوگئے جو کہ ایک روز میں اب تک کی سب سے زیادہ ہلاکتیں ہیں،15ہزار152نئے کیسز کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد مجموعی ہلاکتیں ایک ہزار171اور متاثرہ مریضوں کی تعداد 52ہزار526ہوگئی جن میں سے 8030افراد کی حالت تشویشناک ہے ،مرکزی ملٹری کمیشن کے حکم پر پیپلز لیبریشن آرمی )پی ایل اے(فضائیہ نے 11 ٹرانسپورٹ طیاروں کے ذریعے طبی عملہ اور اشیا ووہان شہر پہنچا دیں جبکہ صدر شی جن پھنگ کی منظوری سے مسلح افواج کے 2600 اضافی طبی عملہ متاثرہ شہر ووہان روانہ ہوگیا۔جمعرات کو چین کے محکمہ صحت کے حکام نے کہا ہے کہ ملک کے31 صوبائی سطح کے علاقوں اور سنکیانگ پیداواری وتعمیراتی علاقوں سے بدھ کونوول کرونا وائرس کے15ہزار152 نئے تصدیق شدہ کیسز اور254 ہلاکتوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔نیشنل ہیلتھ کمیشن کے ایک ترجمان میی فینگ کے مطابق ان ہلاکتوں میں 242 اموات ہوبے کے صوبے میں ہوئی ہیں، ہیننان میں دو جبکہ تیانجن،ہیبی،لیاوننگ۔ہیلونگ جیانگ،انہوئی،شینڈونگ،گوانگ ڈونگ،گوانگ شی،ہینن اورسنکیانگ پیداواری وتعمیراتی علاقوں میں ایک ایک موت واقع ہوئی۔کمیشن کا کہنا ہے کہ بدھ کو رپورٹ ہونے والے مشتبہ کیسز کی تعداد2ہزار807 ہے۔بدھ کو ہی شدید بیمار مریضوں کی تعداد میں 174 کی کمی جبکہ صحت یابی کے بعد1ہزار171 مریضوں کو اسپتالوں سے فارغ کیاگیا۔بدھ تک مادر وطن مین تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد52ہزار526 جبکہ کل ہلاک شدگان کی تعداد1ہزار367 تھی۔کمیشن نے مزید بتایا کہ شدید بیمار مریضوں کی تعداد8ہزار30 ،اس وائرس کے مشتبہ افراد کی تعداد13ہزار435 جبکہ 5ہزار911 افراد کوصحت یابی کے بعد اسپتالوں سے فارغ کیاگیا۔کمیشن کے مطابق اس وائرس سے متاثرہ افراد سے قریبی تعلق رکھنے والے4لاکھ71ہزار531 افراد کو پتہ چلایا گیا جن میں سے29ہزار429 کو طبی نگہداشت کے بعد بدھ کو ڈسچارج کردیا گیا تاہم1لاکھ81ہزار386 افراد تاحال میڈیکل نگرانی میں ہیں۔بدھ تک ہانگ کانگ خصوصی انتظامی ریجن( ایس اے آر) میں اس وائرس کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد50 جبکہ مکاو ایس اے آر میں10 اور تائیوان میں18مصدقہ مریض تھے۔کورونا وائرس کی تشخیص کے معیار پر نظر ثانی کے بعد ہوبے میں نئے کیسز میں اضافہ ہوا ہے ۔قومی ہیلتھ کمیشن کی جانب سے جاری کردہ تشخیص اور علاج کے طریقہ کار کے تازہ ترین ورژن کے مطابق کوئی بھی مشتبہ کیس جو نمونیا سے متعلق کمپیوٹرائز ڈٹومو گرافی(سی ٹی) سکین نتائج پر مبنی ہو، اسے طبی تشخیص کے کیسز میں شمار کیا جاتا ہے۔صوبائی ہیلتھ کمیشن نے کہا ہے کہ تشخیص کے معیار پر نظرثانی کا مقصد ایسے مصدقہ مریضوں کو بروقت معیاری علاج کی فراہمی ہے تاکہ علاج کی کامیابی کی شرح کو مزید بہتر بنایا جاسکے۔مرکزی ملٹری کمیشن کے حکم پر پیپلز لیبریشن آرمی )پی ایل اے(فضائیہ نے جمعرات کے روز 11 ٹرانسپورٹ طیاروں کے ذریعے طبی عملہ اور طبی اشیا وائرس سے متاثرہ ووہان شہر پہنچائیں، جوکہ مسلح افواج کی جانب سے فراہم کیا گیا ہے۔یہ پہلی بار ہے کہ چین میں ملکی طور پر تیار کردہ بڑے ٹرانسپورٹ طیارے Y-20غیر فوجی مہم میں حصہ لے رہے ہیں۔ یہ بھی پہلی بار ہوا ہے کہ فضائیہ نے بڑے اور درمیانی نقل وحمل کے طیاروں کو ہنگامی فضائی نقل وحمل کی خدمات کے لئے بڑے پیمانے پر استعمال کیا ہے۔فضائیہ کے y-20 طیاروں سے لیس ڈویژن کے کمانڈر تو با لِن نے کہا ہے کہ Y-20 طیاروں کی اس سرگرمی میں شرکت فضائیہ کی سٹریٹجک ڈیلیوری کی صلاحیتوں کا حقیقی امتحان ہے ۔Y-20 طیارے طویل مسافت اور خراب موسمیاتی صورتحال میں فضائی آمدورفت کا فریضہ سرانجام دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔نوول کورونا وائرس کی وبا کے پھیلا ئو کے بعد سے اب تک فضائیہ نے وائرس سے متاثرہ علاقوں کو طبی عملے اور طبی اشیا بڑی تعداد میں پہنچائی ہیں۔فضائیہ سے تعلق رکھنے والے دستے بھی ہوبے میں تعینات ہیں جو کہ وبائی مرض کا مرکز ہے اور طبی آلات اور روزمرہ کی ضروریات زندگی کی نقل وحمل میں حصہ لے رہے ہیں۔مرکزی ملٹری کمیشن کے چیئرمین شی جن پھنگ کی منظوری سے مسلح افواج کے 2600 اضافی طبی عملہ کو صوبہ ہوبے اور نوول کورونا وائرس وبا کے مرکزی شہر ووہان کے 2 ہسپتالوں میں مریضوں کے علاج معالجے کی ذمہ داری دی جائے گی۔طبی ماہرین ہو شن شان عارضی ہسپتال کو بطور نمونہ لیں گے اور تھائیکانگ تھونگ جی ہسپتال اور ہوبے کے زچگی اور بچوں کی صحت کی دیکھ بھال کے ہسپتال کی ایک برانچ میں نوول کورونا وائرس کے تصدیق شدہ مریضوں کا علاج کریں گے۔دونوں ہسپتالوں میں بالترتیب 860 اور 700 بستروں کی گنجائش موجود ہے جن میں طبی وارڈز کے ساتھ ساتھ متعددی بیماری پر قابو پانے کا شعبہ، معائنہ، خصوصی تشخیص، تابکاری تشخیص، طبی آلات، جراثیم سے پاک اشیا، معلومات اور طبی انجینئرنگ کی سہولیات بھی موجود ہیں۔امدادی طبی عملہ فوج، بحریہ، فضائیہ، راکٹ فورس، تزویراتی معاون فورس، مشترکہ لاجسٹک فورس اور چین کی مسلح پولیس فورس کے ساتھ منسلک صحت کے اداروں سے تعلق رکھتا ہے۔ان میں سے 1400 طبی اور پیشہ ور نرسوں پرمشتمل گروہ جمعرات کے روز ووہان پہنچ جائے گا اور فوری طور پر مریضوں کا علاج شروع کر دے گا۔ووہان میں نوول کورونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کیلئے مسلح افواج اب تک 4 ہزار پیشہ ورطبی ماہرین کے 3 گروپس بھیج چکی ہیں۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں