بھارت میں ہونے والے واقعات نے اس کی جعلی جمہوریت کی قلعی کھول دی، سردار مسعود

بھارت میں ہونے والے واقعات نے اس کی جعلی جمہوریت کی قلعی کھول دی، سردار مسعود
دہلی ہائی کورٹ میں جس جج نے ہندئو بلوائیوں کے خلاف ایف آئی آر درج کا حکم دیا تھا وہ تبدیل کر دیا گیا،
کراچی سے خیبر تک پورا پاکستان کشمیریوں کے ساتھ کھڑا ہے ڈپٹی سپیکرقومی اسمبلی قاسم خان سوری۔
اسلام آباد:آزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ بھارت میں ہونے والے واقعات میں صرف بھارتیہ جنتا پارٹی اور آر ایس ایس کو ہی نہیں بے نقاب کیا بلکہ بھارت کی جعلی جمہوری کی قلعی بھی کھول دی ہے اور یہ ثابت ہو گیا ہے کہ پاکستان کا سیاسی نظام بھارت سے کہیں زیادہ بہتر ہے۔ دہلی ہائی کورٹ کے جج مرلی دہر جس نے دہلی میں ہندو مسلم فسادات کے ذمہ داران کے خلاف پولیس کو ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دیا تھا اس کو دہلی ہائی کورٹ سے پنجاب ہریانہ ہائی کورٹ میں تبدیل کر دیا گیا اور یہ سب کچھ حکومت کی ایماء اور دبائو پر کیا گیا جس کی نظیر دنیا میں کہیں نہیں ملتی۔ آزادی کا نعرہ جو پہلے صرف وادی کشمیر میں گھونجتا تھا مودی کی حماقتوں کی وجہ سے اس نعرے کی گونج اب بھارت کے ایک سو شہروں میں سنائی دے رہی ہے ۔ کشمیر ہائوس اسلام آباد میں قومی اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صدر آزادکشمیر نے کہا کہ بھارت مقبوضہ جموں وکشمیر میں آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے کے لئے کشمیریوں کی زمین کے بڑے بڑے قطعات ہندوئوں میں تقسیم کر رہا ہے جبکہ مقبوضہ کشمیر میں ایک ایسی سیاسی کلاس کی تلاش جاری ہے جو بھارت کے گیت گانے کے لئے تیار ہو۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت کشمیر کے حوالے سے اپنے مذموم عزائم میں کبھی کامیاب نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری یتیم نہیں ہیں کہ انہیں بھارت گھیر کر ختم کر دے گا۔ پاکستان اور آزادکشمیر کے عوام کشمیر کے مسئلہ پر متحد اور ایک ہیں اور سیاسی معاملات میں اختلافات کے باوجود مسئلہ کشمیر پر تمام سیاسی جماعتیں ایک ہیں جس کا مظاہرہ یوم یکجہتی کشمیر کہ موقع پر قوم نے دیکھا اور اسی طرح پاکستان کی پارلیمان میں کشمیر کے حوالے سے جس بے مثال اتحاد اور قومی یکجہتی کا مظاہرہ کیا اس کی مثال بھی قومی تاریخ میں نہیں ملتی۔ صدر آزادکشمیر نے کہا کہ بھارت ہوش کے ناخن لے اور مقبوضہ جموں وکشمیرمیں جاری ظلم و ستم کرے اور کشمیریوں کے بنیادی انسانی حقوق کا احترام کرے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں حق خودارادیت ملنا چاہے۔ صدر سردار مسعود خان نے خبردار کیا کہ اگر بھارت کے حکمران بازنہ آئے اور کشمیریوں کو نسل کشی کا سلسلہ بند نہ کیا گیا تو پھر ہمارے لئے تیرہ کروڑ نوجوانوں کو قابو میں رکھنا مشکل ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا اگر مسئلہ کشمیر کشمیریوں کی امنگوں اور خواہشات کے مطابق حل نہ کیا گیا تو خطے کے دو جوہری ملکوں کے درمیان ایٹمی جنگ کے امکانات کو رد نہیں کیا جا سکتا۔ اگر ایٹمی جنگ ہوئی تو پورا خطہ تباہ و برباد ہو جائے اور اس کا سب سے بڑا نقصان خود بھارت کو اٹھانا پڑے گا۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے قومی اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری نے کہا کہ کشمیر سے شروع ہونے والی آگ نے اب پورے بھارت کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے کہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں بھارتی فوج کے مظالم اور شہریت قانون کے خلاف اب بھارت کے اندر سے بھی آوازیں اُٹھ رہی ہیں اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دورے کے دوران بھارت کے ایک سو شہروں میں مظاہرے ہوئے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ بھارت کی سول سوسائٹی نے انتہاء پسند حکومت کے اقدامات کو مسترد کر دیا ہے اور دنیا نے بھی بھارت کے مکروہ چہرے کو دیکھ لیا ہے۔ انہوں نے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ کشمیریوں کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور خود بھارتی رہنمائوں کے وعدوں کے مطابق حق خودارادیت دلانے کے لئے ٹھوس اقدامات کرے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام اور حکومت مصیبت کی اس گھڑی میں کشمیریوں کو تنہا ہر گز نہیں چھوڑیں گے ۔ قاسم خان سوری نے کہا کہ پاکستان نے بین الاقوامی پارلیمان یونین سمیت تمام عالمی فورم پر مسئلہ کشمیر کو اٹھایا اور یہ سلسلہ مستقبل میں بھی جاری رہے گا۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں